ہندوتواہ  اور صیہونیت کے ساتھ  اس کا تعلق(Urdu edition)

Categories: , , ,

ہندوتواہ
اور صیہونیت کے ساتھ  اس کا تعلق

اَمرت وِلسن

اسرائیل پر  لیکچرز کا سلسلہ
معاون:  لاہورہ آلباسٹ ،  ادارہ برائے مطالعہ فلسطین ، یو ایس اے
ثالث:  ڈاکٹر وریندر سنگھ کالرا
ایڈیٹر: طارق محمود ، امریکن یونیورسٹی بیروت

دسمبر 2022 میں لکھا گیا، یہ متن انسٹی ٹیوٹ آف فلسطین سٹڈیز کی دعوت پر دیے گئے ایک لیکچر پر مبنی ہے۔ اس کے بعد سے اسرائیل اور بھارت کے تعلقات مزید گہرے ہوئے ہیں اور دونوں ممالک میں مظالم آسمان کو چھونے لگے ہیں۔ 5 اپریل 2023 کو اسرائیلی فورسز نے مقبوضہ مشرقی یروشلم میں مسجد اقصیٰ کے احاطے پر دھاوا بول دیا اور اندر نمازیوں پر حملہ کیا۔ ایک ہی وقت میں، اسرائیل کو ایک متنوع گروہ کے درمیان لڑائی میں اندرونی انتشار کا سامنا ہے، جن میں وہ لوگ بھی شامل ہیں جو یہ سمجھتے ہیں کہ موجودہ آباد کار کالونی ایک جمہوری قوم ہے اور چاہتے ہیں کہ چیزیں جوں کی توں رہیں، اور وہ بھی جو دائیں طرف کھڑے ہیں۔ اہم بات یہ ہے کہ بھارت کی حکمران جماعت بی جے پی مؤخر الذکر کی حمایت کرتی ہے۔ یہ کتاب ہندوتوا کے بارے میں ہے، وہ نظریہ جو وزیر اعظم نریندر مودی کی ہندو بالادستی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) حکومت کو چلاتا ہے، اور صیہونیت، اسرائیلی نسل پرست ریاست کا نظریہ۔ ابھرتے ہوئے فاشزم کے اس دور میں، یہ دونوں نمایاں طور پر ملتے جلتے نظریے دنیا کی دو سب سے زیادہ جابرانہ دائیں بازو کی ریاستوں کے درمیان اقتصادی اور فوجی اتحاد کو مضبوط بنانے میں انتہائی اہم ہیں – جبکہ ثقافتی میدانوں میں انہیں قانونی حیثیت دینے میں مدد فراہم کرتے ہیں۔ اسرائیل بلاشبہ ایک آبادکار نوآبادیاتی ریاست ہے، لیکن یہ بھارت کی طرح ایک فاشسٹ ریاست بھی ہے، نہ صرف ‘انتہا پسند جماعتوں جو کہ حکومت کا حصہ ہیں’ کی وجہ سے بلکہ ‘ان کے اہل کاروں – نیتن یاہو اور مروان بشارا کے الفاظ میں، نیتن یاہو ‘جدید اسرائیلی فاشزم کا گاڈ فادر’ ہے۔

Written in December 2022, this text is based on a lecture given earlier at the invitation of the Institute of Palestine Studies. Since then, the relationship between Israel and India has deepened further and atrocities have skyrocketed in both countries. On 5 April 2023, Israeli forces stormed Al Aqsa Mosque compound in occupied East Jerusalem and attacked worshippers inside. At the same time, Israel is facing internal turmoil in a battle between a diverse group, including those who think the current settler colony is a democratic nation and want things to remain as they are, and those who stand even further to the right. Significantly, the BJP, India’s ruling party, supports the latter. This book is about Hindutva, the ideology which drives the Hindu-supremacist Bharatiya Janata Party (BJP) regime of Prime Minister Narendra Modi, and Zionism, the ideology of the Israeli apartheid state. In this era of rising fascism, these two remarkably similar ideologies are crucially important in cementing the economic and military alliance between two of the world’s most repressive right-wing states – while helping to legitimize them in cultural arenas. Israel is, of course, a settler colonial state, but it is also, like India, a fascist state, not only because of ‘the extremist parties that [are] part of the government’ but also because of ‘their enablers – Netanyahu and his chauvinistic Likud party which long strove for a Jewish state dominating both sides of the Jordan River.’ In the words of Marwan Bishara, Netanyahu is ‘the godfather of modern Israeli fascism.’

Page Count: 42
Binding Type: PDF
Trim Size: 6in x 9in
Language: Urdu
Colour: B&W

Clear

Amrit Wilson is a writer and activist on issues of race and gender in Britain and South Asian politics. She is a founder member of South Asia Solidarity Group and the Freedom Without Fear Platform, and board member of Imkaan,…

    دیباچہ

    1

    ہند اسرائیل لیکچروں  پر صیہونی حملہ

    3

    تعارف

    5

    نوآبادیاتی حکمرانی کی میراث

    6

    ہندوتواہ  اور فسطائی ہندو ریاست کی راہ

    9

     بی جے پی  جدید مظہر ہے

    11

    مودی ، مردِ ترقی  

    12

    گجرات کا قتل عام

    13

    نسل کشی /نسلی تطہیر

    14

    انڈیا  اسرائیل  تعلقات

    17

    نیو لبرل ازم اور ہندوستان و  اسرائیل کے درمیان  فرق

    19

    بھارت کی تلخ حقیقت اسرائیل سے بہت مختلف ہے

    19

    ہندوستان میں  فسطائی ہندوتواہ  کے خلاف مزاحمت

    20

     صیہونیت کی نقل  میں  ہندوتواہ   گلوبل ہو گئی

    20

    حوالہ جات

    24

    نوٹس~~~

    32

    SKU: N/A
    Categories:, , ,
    Book Format

    PDF

    Customer Reviews

    There are no reviews yet.

    Only logged in customers who have purchased this product may leave a review.